Piyason Kai Liye Maut Ka Paigham

1) Piyason kai liyai maut ka paighaam sahar hai
Chal jayai ga Shabbir ki gardan pai bhi khanjer.

2) Is raat chamaktai hain falak per jo sitarai
Lut jayai ga aik roz main Zahra ka bhara ghar.

3) Abbas kai shaanai bhi kalam hon gai labai naher
Chin jaayi gi kal Zainab-o-Kulsoom ki chadar.

4) Jo seenai pai Shabbir kai soti hai Sakina
Dhundai gi na mil jayai gi lut jayain gain Gohar.

5) Beemar ka bister bhi adu kainchain gai aaker
Pehnayain gai beemar ko woh aahain nilangar.

6) Yeh raat agar dhal gayi sooraj nikal aya
Mur jhayai ga pardes main Zahra ka gulistar.

1) پیاسوں کے لئے موت کا پیغام سحر ہے
چل جائے گا شبیر کی گردن پر بھی خنجر۔

2) اس رات چمکتے ہیں فلک پر جو ستارے
لٹ جائے گا ایک روز میں زہرا کا بھرا گھر۔

3) عباس کی شانائی بھی کلام ہوں گے لبائے نہر
چھن جائے گی کل زینب و کلثوم کی چادر۔

4) جو سینے پر شبیر کی سوتی ہے سکینہ
دھونڈی گی نہ مل جائیں گے لوٹ جائیں گے گوہر۔

5) بیمار کا بستر بھی آدھوں کینچین گئی آکر
پہنائیں گے بیمار کو وہ آہیں نیلنگر۔

6) یہ رات اگر ڈھل گئی سورج نکل آیا
مر جائے گا پردیس میں زہرہ کا گلستاں۔

378 Views

Scan this QR code to view these lyrics on your mobile devices.

More
Lyrics

More Nohay Lyrics Available On The APP

Screenshot