Karbala Se Jo Kabhi Hokay Hawa Aati

Karbala se jo kabhi ho ke hawa aati hay
Kisi Masoom ki hichki ki sada aati hay

Maa samajhti hay dulhan laoon gi aaya hay shabab
Sheh samjhtay hain ke Akbar ki qaza aati hay

Kon sota hay kanaray teray aey nehr e Furat
Teri matti se abhi booey wafa aati hay

Koyi beemar na parrhta ho tahajjud ki namaz
Raat ko bairryon ki kyun ye sada aati hay

Haan dharakta na ho maqtal may kaheen qalb e Rubab
Ali Asghar Ali Asghar ki sada aati hay

Jab kabhi ziada may beemar jo hota hoon Saheed
Khud ba khud meray liyay khaak e shifa aati hay

 

 


کربلا سے جو کبھی ہو کے ہوا آتی ہے
ننھے معصوم کے رونے کی صدا آتی ہے
کسی معصوم کی ہچکی کی صدا آتی ہے

کوئی بیمار نہ پڑھتا ہو تہجد کی نماز
رات کو بیڑوں کی کیوں یہ صدا آتی ہے

منہ پھرا لیتے ہیں عباسؑ ٹپکتے ہیں اشک
نہر کی سمت سے ٹھنڈی جو ہوا آتی ہے

ہاں دھڑکتا نہ ہو مقتل میں کہیں قلبِ ربابؑ
علی اصغرؑ علی اصغرؑ کی صدا آتی ہے

کون سوتا ہے کنارے تیرے اے نہرِ فرات
تیری مٹی سے ابھی بوئے وفا آتی ہے

ماں سمجھتی ہے دلہن لاؤں گی آیا ہے شباب
شہؑ سمجھتے ہیں کہ اکبرؑ کی قضا آتی ہے

جب زیادہ کبھی بیمار میں ہو جاتا ہوں
خود بہ خود میرے لئے خاکِ شفا آتی ہے

204 Views
Karbala Se Jo Kabhi Hokay Hawa Aati

Scan this QR code to view these lyrics on your mobile devices.

More
Lyrics

More Nohay Lyrics Available On The APP

Screenshot